عمران فاروق قتل کیس

sample-ad

اسلام آباد:انسدا ددہشتگردی کی ایک عدالت نے متحدہ قومی موومنٹ کے رہنماء ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس میں گرفتار3ملزمان پر فرد جرم عائد کردی۔ بدھ کو انسداد دہشتگردی عدالت میں ڈاکٹرعمران فاروق قتل کیس کی سماعت اڈیالہ جیل میں کی گئی۔

ایف آئی اے کے اسپیشل پبلک پراسیکیوٹرخواجہ محمد امتیازنے بانی ایم کیوایم سمیت7ملزمان کیخلاف چالان پیش کئے۔ چالان میں قتل کی سازش میں بانی ایم کیوایم، افتخارمحمد ،معظم علی ،خالد شمیم،محسن علی اورکاشف کےشامل ہونے کا لکھا گیا۔

عدالت نے 3ملزمان خالد شمیم،معظم علی اورمحسن علی سید پر ڈھائی سال بعد فرد جرم عائد کردی،ملزمان نے صحت جرم سے انکارکیا۔ عدالت نے بانی ایم کیوایم کے دائمی وارنٹ گرفتاری جاری کرتے ہوئے الطاف حسین کے پاکستانی پاسپورٹ اورشناختی کارڈ بلاک کرنے کے احکامات جاری کئے۔

عدالت نے8مئی کو استغاثہ کے گواہ ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر جنرل کیپٹن شعیب اورایف آئی اے کاونٹر ٹیررزم ونگ کے عبدالمنان کوطلب کرلیا

sample-ad

Facebook Comments

POST A COMMENT.